Hepatitis C, Its Causes & preventions

Hepatitis C is a liver infection caused by virus (HCV). Hepatitis C is a blood-borne virus. Today, most people become infected with the Hepatitis C virus by sharing needles or other equipment to inject drugs. For some people, hepatitis C is a short-term illness but for 70%–85% of people who become infected with Hepatitis C, it becomes a long-term, chronic infection. Chronic Hepatitis C is a serious disease than can result in long-term health problems, even death. The majority of infected persons might not be aware of their infection because they are not clinically ill. There is no vaccine for Hepatitis C. The best way to prevent Hepatitis C is by avoiding behaviors that can spread the disease, especially injecting drugs.

Symptoms and signs are

a)      Elevated liver enzymes in the blood

b)      Weakness

c)      Loss of appetite

d)      Weight loss

e)      Breast enlargement in men (gynecomastia)

f)       Redness of the palms

g)      Difficulty with the clotting of blood

h)      Spider-like blood vessels on the skin

i)        Abdominal pain

j)        Clay colored stools

k)      Bleeding from the esophagus

l)        Fluid in the abdomen

m)   Yellow skin and eyes (jaundice)

n)      Confusion

o)      Coma

Hepatitis C is not transmitted by breast-milk. However, a child may be inheritably affected by mother at the time of birth.

A very small number of cases of hepatitis C are transmitted through sexual intercourse. Poor infection control practices during tattooing and body piercing potentially can lead to spread of infection. There have been some outbreaks of hepatitis C when instruments exposed to blood have been re-used without adequate cleaning and sterilization between patients.Hepatitis C can be transmitted from an organ donor to an organ recipient. Donors of organs are tested for hepatitis C.

Hepatitis C is one of several viruses that cause hepatitis (inflammation of the liver).About 0.3% people are estimated to be currently infected with hepatitis C in the Multan district.

Several tests for diagnose are available to measure the amount of hepatitis C virus in a person’s blood (the viral load). The hepatitis C virus’s RNA can be identified by a type of test called polymerase chain reaction (PCR) that detects circulating virus in the blood as early as 2-3 weeks after infection, so it can be used to detect suspected acute infection with hepatitis C early infection.

Hepatitis C infection can cause the body to produce abnormal antibodies called cry globulins. Cry globulins cause inflammation of arteries (vasculitis). This may damage skin, joints, and kidneys. Patients with cryglobulinemia (cry globulins in the blood) may have

a)      joint pain,

b)      arthritis,

c)      a raised purple rash on the legs, and

d)      Generalized pain or swelling of their bodies.

Primary ways to control

  • Not sharing household items
  • Do not inject drugs
  • Eat a diet low in saturated and no trans-fat.
  • Drink 8 to 12 eight ounces of water daily,
  • Reduce sugar and high sodium foods.
  • Exercising regularly
  • Avoid fried foods.
  • Eat lots of fresh vegetables and fruits, choose organic if possible.
  • adhering to medication
  • taking an active role in medical care
  • Not using alcohol

موسمیاتی تبدیلی اور کپاس کی بیماریاں

جیسا کہ ہم سب جانتے ہیں پاکستان ایک زرعی ملک ہے، اور کپاس یہاں کی ایک بہت ہی مشہور فصل ہے جو کہ ملکی استعمال کے علاوہ دیگر ممالک میں بھی درآمد کی جاتی ہے۔ گذشتہ کئی سالوں سے موسم میں غیر معمولی تبدیلیوں کے سبب اس فصل کو مشکلات کا سامنا ہے۔ موسم کی شدت کے باعث بیماریوں کی شرح میں اضافہ ہو جاتا، نئی قسم کی بیماریاں وقوع پذیر ہوجاتی ہیں، یا پھر فصل پر بیماریوں کا حملہ اس قدر بڑھ جاتا ہے کہ کسی بھی قسم کی سپرے سے اس کو روکا نہیں جا سکتا اور نتیجہ فصل کی تباہی ، کسان کی بربادی اور ملکی پیداوار میں کمی کی صورت میں نکلتا ہے۔ موسمی تغیر کے سبب پیدا ہونے والی بیماریاں اورفصل پر ان کے اثرات درج ذیل ہیں
سفید مکھی۔
سفید مکھی شدید گرمی اور حبس کی پیداوار ہے ، یہ پودے کے پتوں پر حملہ آور ہوتی ہے جس سے پتوں کا رنگ تبدیل ہو جاتا ہے اور پودا کمزور ہونا شروع ہو جا تا ہے ۔ ابتدائی حملہ کی صورت میں اگر وقت پر بارش ہو جائے تو ٹمپریچر میں کمی کے باعث اس کا خاتمہ ہو جاتا ہے، بصورت دیگر گرم ہوائیں چلنے سے بھی یہ بیماری ختم ہو جاتی ہے۔ مگ گذشتہ سالوں کے تناظر میں بارشوں کا وقت پر نہ ہونا ریکارڈ کیا گیا ہے جس سے فصل پر سفید مکھی کا حملہ جولائی سے ستمبرمیں شدید ہو جاتا ہے اور پھر مختلف کمپنیوں کے سپرے سے بھی بامشکل قابو کیا جاتا ہے۔ سپرے سے فصل کے اوسط خرچ میں اضافہ ہو تا ہے جو کہ چھوٹے کسان کے بس کی بات نہیں۔
تھرپس۔
تھرپس بھی شدید گرمی کے سبب فصل پر اثر انداز ہوتی ہے۔ یہ پودے کے پتوں میں خوراک کی رگوں پر حملہ آور ہوتی ہے اور اس میں اپنا زہر داخل کر دیتی ہے۔ یہ پودی کے نچلے پتوں پر انڈے دیتی ہے جن کی تعداد ہزاروں میں ہوتی ہے۔ اگر معتدل آب و ہوانہ ملے یاوقت پر سپرے نہ کی جائے تو فصل کو تباہ کر دیتی ہے ۔
مائٹس۔
مائٹس اور تھرپس ایک ہی طرح کی بیماریاں ہیں ، فرق صرف اتنا ہے کہ مائٹس چند پودوں پر اثر انداز ہوتی ہے جبکہ ترپس پوری فصل پر
لشکری سنڈی
لشکری سنڈی کہ لشکر سے تشبیح اس لئے دی گئی ہے کہ یہ لشکر (بڑی تعداد)کی صورت میں حملہ آور ہوتی ہے، ابتداء میں یہ چند پودوں پر نظر آتی ہے لیکن اگر زرا بھی لا پروائی کی جائے تو یہ ایک ہفتہ کے اندر اندر فصل کا صفایا کر دیتی ہے۔ اس کا حملے کا طریقہ کار یہ ہے کہ یہ پتوں کو کھاتی ہے اور ان میں بڑے بڑے سوراخ کر دیتی ہے۔
گلابی اور چتکبری سنڈی
اگست کے آخر میں ٹنڈا پک کر تیار ہو جاتا ہے تو گلابی سنڈی اپنا کام دکھاتی ہے اور ٹنڈے کا اندر گھس کر اسے کھوکھلا کر دیتی ہے یہاں تک کہ ٹنڈا کھلنے سے پہلے ہے تباہ ہو جاتا ہے۔
وائرس
وائرس کا حملہ پتوں پر ہوتا ہے ۔ پتے مڑنا شروع ہو جاتے ہیں اور پودا کمزور ہونے لگتا ہے جس سے نئی کونپلیں نہیں نکل پاتی اور پودے کے بڑھنے کا عمل رک جاتا ہے۔ نتیجہ پودے چھوٹے رہے جاتے ہیں اور ٹنڈوں کی مقدار بھی کم ہوتی ہے جس سے اوسط پیداوار میں کمی واقع ہوتی ہے۔

اوپر بتائی گئی تمام بیماریوں کے پیش نظر ضرورت اس امر کی ہے کہ کسانوں کو اگیتی اور پچھیتی کاشت کی بجائے موسمی تبدیلیوں کے کیلنڈر کے متعلق بتایا جائے۔ تعلیمی اداروں کو موسمی تغیرات پر ریسرچز کرنی چاہیے اور ان کی روشنی میں کسانوں کوجامع لائحہ عمل تیار کر کے دینا چاہیے۔ مختلف کمپنیوں کو اپنی ادویات اور بیج کی ورائٹی میں بہتری لانی چاہیے تا کہ موسمی تبدیلیوں اور اس میں پیدا ہونے والی بیماریوں سے موئثر طریقہ سے مقابلہ کر سکیں۔ حکومتی سطح پر جس طرح گندم کی خرید کے لئے مراکز قائم کیے جاتے ہیں اسی طرح کپاس کی کاشت کے وقت معیاری بیج کی فراہمی اور چنائی کے وقت خرید کے مراکز قائم کیے جائیں تا کہ کسان کا استحصال نہ ہو اور کپاس کی فصل ملکی پیداوار میں اپنی اہمیت بھی برقرار رکھ سکے۔